Mere Dil Ke Qareeb Wo Rasool e Ameeñ lyrics

 

 

Mere Dil Ke Qareeb Wo Rasool e Ameeñ lyrics in Urdu | Hai Dua Teri Sunnat Mile Lyrics in Urdu

Naatkhwan : Zaheer Usmani

اے رسولِ امیں سید المرسلیں
رحمت العالمیں شافیع المذنبیں
میری دنیا و دیں اولیں آخریں
میرے دل کے قریں

سید الانبیاء سید الاتقیاء سید الاولیاء
تو ہے سب سے جدا

 

رحمت دو جہاں رونقِ ہر زماں
شافعِ عاصیاں رہنمائے انس و جاں

فخرِ ارض و سما، دولہاء لامکاں
منبعِ مسلماں کعبہِ مومناں

مہرباں گلستاں تیری شیریں زباں
ہے بلند تیری شاں، ہو فدا دل و جاں

 

تو مکمل و کامل و اکمل ہوا
تو ہی فضل و فضیل اور افضل ہوا

تو تجمل جمیل اور اجمل ہوا
تو ہی طاہر مطہر و اطہر ہوا

برتریں بہترین اور برتر ہوا
تو ہی محسن حسین اور احسن ہوا
تو تمیم و تمام اور خاتِم ہوا

 

لوگ کہتے ہیں چہرہ ہے مہتاب سا
در حقیقت ہے تو خود مثال آپ کا

کب کہاں کس پہ ہو گا شباب آپ سا
نہ مثال آپ کی نہ جواب آپ کا

 

تو نے پرواز کی تو ملیں رفعتیں
اور پہنچا جہاں رب کی تھیں قربتی

زندگانی میں جانا ہے کیا جنتیں
رب نے یوں کیں عطا تم کو سب رحمتیں

رب نے یوں کیں عطا تم کو سب رحمتیں

 

مثلِ جنت ہے مسکن مدینہ ترا
مشق سے بھی ہے بڑھ کر پسینہ ترا

تو ہی منظر مرا تو ہی دینا مرا
تو ہی خاتم مری تو نگینہ مرا

ہر جگہ ہر گھڑی تو خزینہ مرا
تو وجہ جینے کی تو قرینہ مرا

کوئی پوچھے مجھے رہنما کون ہے
پیشوا دلربا آسرا کون ہے

بولتا ہوں اسے
وہ محمد وہ حامد و محمود ہیں

تو ہی ہے تو ہی ہے
تو نہیں گر تو پھر خدا کون ہے
تو ہی ہے تو ہی ہے
تو نہیں گر تو پھر خدا کون ہے

 

کتنی ہم پہ رہیں تیری دل داریاں
کتنی آہیں تیری کتنی غمخواریاں

ہر جگہ ہر گھڑی التجا ہے تری
بخشش دے میری امت دعا ہے تری

عرش پر ہے تو پھر بھی بیاں ہے یہی
وقت رخصت بھی وردِ زباں ہے یہی

روز روز محشر بھی تم دیکھ لینا وہاں
کہہ رہے ہوں گے ہے میری امت کہا
کہہ رہے ہوں گے ہے میری امت کہا

 

اور امت کی حالت پناہ اے خدا
ہر کوئی نفس پر یوں ہوا ہے فدا

نہ کوئی پیشوا نہ کوئی رہنما
جو بھی خواہش ہوئی ڈٹ پڑا با خدا

یہ سمجھتا ہے بس میں نے کلمہ پڑھا
بس اسی کام سے جنتی ہو گیا

چاہے اب میں جہاں جو بھی جیسے کروں
لاابالی جیو لاابالی مروں

کیوں نبی سے خدا سے محبت نہیں
ان کی الفت نہیں ان کی چاہت نہیں

کوئی عزت نہیں کوئی عزت نہیں
کوئی رفعت نہیں کوئی وسعت نہیں

نا ہے ظاہر ترا میرے سرکار سا
نہ ہے باطن ترا میرے سرکار سا

آؤ آؤ چلیں رب کو راضی کریں
اس کی خاطر جی اس کی خاطر مریں

اپنے رب کے لیے جی لے یہ زندگی
بس اسی کے لیے ہو تری بندگی

تو جو سنت محمد کی اپنائے گا
لذتیں عزتیں رفعتیں پائے گا

ہے دعا یہ مری تیری سنت ملے
تیری شفقت ملے تیری الفت ملے

تیری چاہت ملے تیری رحمت ملے
میں جو بھولوں تو تیری فصاحت ملے

نہ کسی کی ہوئی پر تیری چاہت ملے
خواب دیکھوں تو تیری زیارت ملے

لب جو بولیں تو تیری تلاوت ملے
روز محشر میں تیری شفاعت ملے

ذکر تیرا اتنا، نہ فرصت ملے
بس اسی کام میں مجھ کو لذت ملے

حشر میں تیری قربت و جنت ملے
حشر میں تیری قربت و جنت ملے

 

اے رسول امیں سید المرسلیں
رحمت العالمیں شفیع المذنبیں

میری دنیا و دیں اولیں آخریں
میرے دل کے قریں

 

By sulta