Hudood e Tair e Sidra Huzoor Jante Hain Lyrics

 

Hudood e Tair e Sidra Huzoor Jante Hain

Hudood e Tair e Sidra Huzoor Jante Hain
Kahañ Hai Arsh e Mualla Huzoor Jante Hain.

 

Har Ek Harf e Tamanna Huzoor Jante Hain,
Tamam Haal Dilon Ka Huzoor Jante Hain.

 

Unhein Khabar Hai Kahin Se Padho Durood Un Par,
Tamam Dahr Ka Naqsha Huzoor Jante Hain.

 

BaRoz e Hashar Shafa’at Kareñge Chun Chun Kar,
Har Ik Ghulam Ka Chehra Huzoor Jante Hain.

 

Ba Roz e Hashar Shafa’at Karein Ge Wo Lakin,
Agar Hua Ye Aqida “Huzoor Jante Hain”.

 

Main Is Yaqeen Se Nikla Huñ Hazri Ke Liye,
Mere Safar Ka Irada Huzoor Jante Hain.

 

Bula Bhi Sakte Hain Wo Aur Aa Bhi Sakte Hain,
Ke Duriyon Ko Mitana Huzoor Jante Hain.

 

Main Mangta Hun Unhin Se, Unhin Se Mangta Hun,
Huzoor Per Hai Bharosa Huzoor Jante Hain.

 

Khuda Ne Is Liye Qasim Unheiñ Banaya Hai,
Ke Baañtne Ka Qareena Huzoor Jante Hain.

 

Pahonch Ke Sidra Pe Roohul Ameen Kahne Lage
Yahan Se Age Ka Rasta Huzoor Jante Hain

 

Qayamat Ayegi Kab, Unko Ilm Hai ‘Sarwar’
Zuhoor e “Kun” Ka Bhi Lamha Huzoor Jante Hain

 

Sikhayi hum ko Sahaba ne baat ye ‘Sarwar’
Ke janta hai Khuda ya Huzoor Jante Haiñ.

 

Kahenge khuld mein ‘Sarwar’ Nabi ke deewane,
Zara wo naat sunana “Huzur Jante Haiñ”.

Urdu Lyrics

حدودِ طائر سدرہ، حضور جانتے ہیں
حدود طائر سدرہ، حضور جانتے ہیں
کہاں ہے عرشِ معلّی، حضور جانتے ہیں

 

ہر ایک حرفِ تمنّا، حضور جانتے ہیں
تمام حال دلوں کا، حضور جانتے ہیں

 

انھیں خبر ہے کہیں سے پڑھو درود ان پر
تمام دہر کا نقشہ، حضور جانتے ہیں

 

بروزِ حشر شفاعت کریں گے چُن چُن کر
ہر اک غلام کا چہرہ، حضور جانتے ہیں

 

بروزِ حشر شفاعت کریں گے وہ لیکن
اگر ہوا یہ عقیدہ، حضور جانتے ہیں

 

میں اس یقین سے نکلا ہوں حاضری کے لیئے
مرے سفر کا ارادہ حضور جانتے ہیں

 

بلا بھی سکتے ہیں وہ اور آ بھی سکتے ہیں
کہ دوریوں کو مٹانا حضور جانتے ہیں

 

میں مانگتا ہوں انھی سے، انھی سے مانگتا ہوں
حضور پر بھروسہ، حضور جانتے ہیں

 

خدا نے اس لئے قاسم انھیں بنایا ہے
کہ بانٹنے کا قرینہ حضورﷺ جانتے ہیں

 

پہنچ کے سدرہ پر روح الامین کہنے لگے
یہاں سے آگے کا رستہ، حضور جانتے ہیں

 

قیامت آئے گی کب، ان کو علم ہے سرور،
ظہورِ کن کا بھی لمحہ حضور جانتے ہیں

 

سکھائی بات یہ سرور ہمیں صحابہ نے
کہ جانتا ہے خدا یا، حضور جانتے ہیں

 

کہیں گے خلد میں سرور، نبی کے دیوانے
ذرا وہ نعت سنانا، حضور جانتے ہیں

By sulta