خواب میں میرے کبھی تشریف لائیں  غوثِ پاک

خواب میں میرے کبھی تشریف لائیں  غوثِ پاک

خواب میں میرے کبھی تشریف لائیں  غوثِ پاک
میرے   خوابیدہ   مقدّر  کو    جگائیں  غوث پاک

اپنے پائے  ناز  کی   برکت  سے  کر کے   مستفیض
میرے گھر کو بھی کبھی جنت  بنائیں  غوث پاک

کوئی قوّت  اس  کو  دنیا  کی  گرا  سکتی  نہیں
اپنے فضلِ خاص سے جس کو اٹھائیں  غوث پاک

ہو   گئ   باب  اجابت  پر   رسائی   ان  کی  بھی
واسطے سے تیرے جو کی ہیں دعائیں  غوث پاک

بہرِ سرکارِ  دو  عالم ﷺ  ہم  غریبوں کی  طرف
بھیج دو  ابرِ سخاوت   کی   گھٹائیں  غوث پاک

آرزو  رکھتے  ہیں  ہم  یہ   آپ   کے   دربار    میں
آپ  ہی   کی   منقبت   آکر   سنائیں    غوث پاک

وہ تصرف رب عَزّوَجَلْ نے بخشا ہے انہیں اِک آن میں
جس جگہ چاہیں وہاں پر آئیں جائیں  غوث پاک

چھو نہیں سکتی اسے خرشید  محشر  کی تپش
وہ جسے مفتاح  دامن  میں  چھپائیں  غوث پاک

Leave a Comment